22

چیئرمین کشمیر کمیٹی شہر یار آفریدی کا اخوت یونیورسٹی مصطفی آباد کا دورہ،

قصور(میاں خلیل صدیق آرائیں سے )

چیئرمین کشمیر کمیٹی شہر یار آفریدی کا اخوت یونیورسٹی مصطفی آباد کا دورہ، ملک کے مختلف مقامات پر اخوت یونیورسٹی کیلئے پچاس پچاس ایکٹر زمین دینے کا اعلان کرتا ہوں، شہر یار آفریدی، ڈاکٹر امجد ثاقب کی انسانیت کیلئے خدمات نا قابل فراموش ہیں، ہم انہیں خراج تحسین پیش کرتے ہیں، چیئرمین کشمیر کمیٹی کا اخوت یونیورسٹی میں منعقدہ تقریب سے خطاب، تفصیلات کے مطابق چیئرمین کشمیر کمیٹی شہر یار آفریدی کا اخوت یونیورسٹی مصطفی آباد کا دورہ کیا ا موقع پر بانی و سرپرست اعلی اخوت فاونڈیشن ڈاکٹر امجد ثاقب،ممبر بورڈ آف ڈائریکٹرز جناب سلیم احمد رانجھا، ابوبکر صدیق، کرنل ریٹائرڈ مونم نیاز، آصف علی پاشا، ڈائریکٹرپروٹوکول اخوت یونیورسٹی قصور سید تیمور گیلانی و دیگر اساتذہ و طلبہ نے انہیں اخوت یونیورسٹی کاوزٹ کروایا،اس موقع پر چیئرمین کشمیر کمیٹی شہر یار آفریدی نے منعقدہ تقریب سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ اخوت یونیورسٹی جس انداز میں بچوں کو فری تعلیمی سہولیات فراہم کر رہی ہے، اس کی مثال نہیں ملتی، اخوت کا فری تعلیم دینے اور دنیا کا سب سے بڑا قرضہ حسنہ کا پروگرام قابل تحسین ہے، ڈاکٹر امجد ثاقب جیسے انسان مائیں صدیوں بعد پیدا کرتی ہیں، ڈاکٹر امجد ثاقب اللہ کے ولی ہیں جو انسانیت کی خدمت کا عظیم کارنامہ انجام دے رہے ہیں، ہم اخوت کے شابشانہ ہیں،ہم جنوبی اضلاع، بلوچستان، آزاد کشمیر، گلگت بلتستان سمیت دیگرمقامات پرمیں اخوت کیلئے پچاس،پچاس ایکٹر اراضی دینے کا اعلان کرتا ہوں، اخوت یونیورسٹی کے حوالے سے وزیر اعظم عمران خان کو آگاہ کروں گا، میں انسانیت کی خدمت کیلئے اخوت کے شانہ بشانہ ہوں، وزیر اعظم گلگت بلتستان کو اخوت یونیورسٹی میں لا?ں گا،ڈاکٹر امجد ثاقب کو پارلیمانی میں آنے کی دعوت دیں گے، پارلیمانی کمیٹی میں تمام سیاسی جماعتوں کے رہنما شریک ہیں یہ دعوت ان کی طرف سے ہو گی، انہوں نے مزید کہا کہ میڈیا کو چائیں کہ پاکستان میں انسانیت کی خدمت کیلئے ہونے والے کاموں سے دنیا کو آگاہ کرے، کہا جاتا ہے جب کتا انسان کو کاٹے وہ خبر نہیں ہے بلکہ جب انسان کتے کو کاٹے تو خبر ہے، میڈیا منفی رپورٹنگ کرتا ہے، میڈیا کو پاکستان کا مثبت چہرہ بھی دنیا کے سامنے لانا چاہئے، دنیا میں مہاجرین کو کیمپوں میں رکھا جاتا ہے جبکہ افغانستان کے لاکھوں مہاجرین پاکستان میں مقیم ہے جنہیں مہاجر کیمپوں میں نہیں بلکہ گھروں میں رکھا جاتا ہے، یہ بھی انسانیت کی خدمت ہے، پاکستانی فوجی دنیا

 کے امن کیلئے قربانیاں دے رہے ہیں، ہم نے دنیا کی آنے والی نسلوں کو ڈرگ ے بچانے کیلئے قابل ذکر اقدامات کئے،دنیا میں عظیم وہ ہیں جو انسانیت کے تقاضوں کو پورا کرتے ہیں، ہم نے سب سے پہلے مہذب انسان بننا ہے، انسانیت دوسروں کیلئے سوچنے کا نام ہے، بانی و سرپرست اعلی اخوت فا?نڈیشن ڈاکٹر امجد ثاقب نے کہا کہ اخوت یونیورسٹی منی پاکستان ہے جہاں پر پاکستان کے تمام صوبوں سے تعلق رکھنے والے بچے فری زیور تعلیم سے آراستہ ہوتے ہیں، ہم پاکستان سے غربت کے خاتمہ کیلئے دنیا کا سب سے بڑا قرض حسنہ کا پروگرام چلا رہے ہیں جس سے کروڑوں پاکستان مستفید ہو رہے ہیں، اس قرض کی واپسی 99.99فیصد ہے، جو پاکستانیوں کے امیدار ہونے کا واضع ثبوت ہے،اخوت وزیر اعظم پاکستان کے تعاون سے ملک بھر میں بے گھروں کیلئے گھر بنانے کیلئے بھی قرضہ دے رہے ہیں، انسانیت کی خدمت کا یہ سفر جاری رہے

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں