89

پنجاب بار کونسل کی جعلی وکلاء کیخلا ف کارروائی قابل ستائش ہے

قصور (میاں خلیل صدیق آرائیں سے )

۔جعلی وکلاء عظیم پیشے کی بدنامی کا باعث بنتے ہیں، ان کا قلع قمع ضروری اور کسی قسم کی رعایت نہیں برتنی چاہئے۔ ان خیالات کا اظہار چوہدری محسن ریاض ایڈووکیٹ نے اپنے چیمبر میں صحافیوں سے خصوصی گفتگو کے دوران کیا۔ انہوں نے کہا کہ وکلاء اور صحافی مظلوموں کی آواز بن کر ان کو انصاف دلانے میں اہم کردار ادا کرتے ہیں، ان کے درمیان اچھا ریلشین شپ از حد ضروری ہے۔چند نان پروفیشنل اور جعل سازوں نے ان دونوں عظیم پیشوں کو بدنام اور اس کی ساکھ خراب کرنے کی کوشش کی ہے، ہم ایسے عناصر کی سرکوبی کیلئے اپنا اہم کردار ادا کریں گے۔ ان شاء اللہ پنجاب بار اور قصور بار کے پروفیشنل ممبران کے ساتھ ملکر ایسے عناصر کا محاسبہ کریں گے اور معتبر پیشوں کے ساتھ کھلواڑ کرنے کی اجازت ہر گز نہیں دیں گے۔ پنجاب بار کونسل کی جانب سے جعلی وکلاء کی سرزنش اور ان کو بے نقاب کرنے پر پنجاب بار کونسل کو خراج تحسین پیش کرتے ہیں۔انہو ں نے کہا کہ میرے چیمبرز کے دروازے ہر مظلوم کیلئے ہر وقت کھلے ہیں، مظلوم کی دادرسی اور معاونت کسی بھی فیس کے بغیر کی جاتی ہے۔ میرے چیمبرز کے ساتھی شفاقت حنیف وریا ایڈووکیٹ، یاسین بھٹی ایڈووکیٹ، میاں صداقت علی گوشی ایڈووکیٹ، چوہدری فیصل نذیر ایڈووکیٹ، چوہدری عادل جاوید، چوہدری اشتیاق و دیگر ہمہ وقت خدمت خلق کے جذبہ کے تحت فری معاونت کیلئے حاضر ہیں۔ ہمارا منشور ہے کہ خدمت خلق کے ذریعے جہاں معاشرے میں موجود ناانصافیوں کا خاتمہ اور مظلوموں کی داد رسی ہوگی وہیں ہمیں اپنی دنیا و آخرت بھی سنوارنے کا موقع ملے گا۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں