11

وقاص شریف : سند یلیا نوالی پرانی رنجش کی بنا پر مسلح ملزمان نے رپیٹر کے پے در پے فائر کر کے نوجوان کو قتل کر دیا

 سندیلیانوالی

سند یلیا نوالی پرانی رنجش کی بنا پر مسلح ملزمان نے رپیٹر کے پے در پے فائر کر کے نوجوان کو قتل کر دیا۔ 6 ملزمان کے خلاف مقدمہ درج۔

 سند یلیا نوالی کی نواحی چک 751 گ ب میں پرانی رنجش کی بنیاد پر مسلح ملزمان نے گولیوں کی بوچھاڑ کر کے نوجوان کو قتل کر دیا۔ ایک زخمی۔ تفصیلات کے مطابق غلام عباس ولد طالب حسین قوم سدھڑ سکنہ 747 گ ب نے تھانہ اروتی کو تحریری درخواست میں موقف اختیار کیا ہے کہ میں بمعہ برادرم محمد رمضان ولد طالب حسین۔ سرفراز ولد شیر محمد۔ آفتاب ولد بشیر احمد اقوام سدھڑ ساکنان چک 747 گ ب۔ مشرف جاوید ولد محمد صدیق قوم کھرل سکنہ بستی در آ باد سند یلیا نوالی ہم سبھی 751 گ ب بھٹیاں والا میں ایک کریانہ کی دکان کے باہر چارپائیوں پر بیٹھے ہوئے تھے کہ اتنے میں تین کس اشخاص عمر دراز ولد عبد الغفار مسلح رپیٹر۔

عبد الرحمن ولد نامعلوم مسلح رپیٹر۔ فیاض ولد غفار مسلح رپیٹر اقوام سدیانہ سکنہ چک 330 گ ب موٹر سائیکل پر آ گئے اور ان کے پیچھے ہی ایک اور موٹر سائیکل بلا نمبری آ گئی جس پر بھی تین آدمی سوار تھے جن میں سے ایک کا نام شان ولد اعجاز قوم سدیانہ اور دو کس نامعلوم اشخاص مسلح

آ تشیں اسلحہ آ گئے۔ تو ملزمان عمر دراز۔ عبدالرحمن۔ فیاض احمد نے سیدھے فائر کر کے برادرم محمد رمضان کو گولیوں سے چھلنی کر دیا اور وہ لہو لہان ہو کر زخموں کی تاب نہ لاتے ہوئے زمین پر گر پڑا۔ اور موقع پر ہی جاں بحق ہو گیا۔ پھر ملزم شان نے فائر کیا جو مشرف جاوید کی ٹانگ پر لگا۔ وجہ عناد یہ ہے کہ ملزمان عمر دراز کا بھائی شہباز اور اعجاز نے عرصہ دو ماہ قبل ہمارے والد طالب حسین کو ناحق قتل کیا تھا برادرم متوفی نے اپنی مدعیت میں ان کے خلاف مقدمہ درج کرا رکھا تھا جس کا ملزمان کو رنج تھا۔ ایس ایچ او تھانہ اروتی نے کارروائی کرتے ہوئے مقتول محمد رمضان کے بھائی غلام عباس کی مدعیت میں مقدمہ درج کر لیا ہے۔ یہاں یہ امر قابلِ ذکر ہے کہ دو ماہ کے بعد دوسرا قتل ہو جانا یہ کوئی معمولی واقع نہیں ہے ایسے واقعات کی روک تھام کیلئے قانون نافذ کرنے والے اداروں کو بروقت عملی اقدامات اٹھائے جانے چاہئیں

twitter.com/joinwsharif

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں