84

ملک میں سردی کی شدت کے اضافے کے ساتھ ہی گیس کی لوڈ شیڈنگ میں اضافہ گھریلو صارفین،سٹوڈینٹس اور ملازم پیشہ افراد کو شدید مشکلات کا سامنا

قصور(میاں خلیل صدیق آرائیں سے)ملک میں سردی کی شدت کے اضافے کے ساتھ ہی گیس کی لوڈ شیڈنگ میں اضافہ گھریلو صارفین،سٹوڈینٹس اور ملازم پیشہ افراد کو شدید مشکلات کا سامنا لوگ مہنگی روٹی خریدنے کے لیے لائینوں میں لگ گئے منی گیس فلنگ اسٹیشنز کی چاندی ہوگئی گیس کے منہ مانگے دام وصول کرنے لگے شہریوں کی حکومت سے گیس کے مسلئے کو خصوصی طور پر حل کرنے کی اپیل۔ملک بھر میں سردی کی شدت میں اضافے کے ساتھ ہی گیس کی لوڈ شیڈنگ میں بھی اضافہ گھریلو صارفین،سٹوڈینٹس اور ملازم پیشہ افرا د کی مشکلات میں اضافہ گیس نا ہونے کی وجہ سے لوگ مہنگا گیس سلنڈر خریدنے پر مجبور اور ساتھ ہی ساتھ ہوٹلوں پر بھی ایسے حالات میں رش میں اضافہ ہوجاتا ہے جس کی وجہ سے بچے سکول میں وقت پر نہیں پہنچ پاتے اور ملازم پیشہ افراد بھی اپنے دفتروں میں مقررہ وقت پر نہیں پہنچ پاتے جس کی وجہ سے سکولوں اور دفاتر میں حاضری نا ہونے کے برابر ہوتی ہے جبکہ منی گیس فلینگ اسٹیشنز کی چاندی ہو گئی سلنڈرریفلنگ کا کام اس وقت عروج پر ہے اور گیس فلنگ کے منہ مانگے دام بھی وصول کیے جارہے ہیں شہریو ں کا کہنا ہے کہ پاکستان تحریک انصاف کی حکومت بھی گیس لوڈ شیڈنگ میں کوئی تبدیلی نہیں لا سکی گزشتہ کئی سالوں سے سردیوں میں غائب ہوجانے والی گیس آج بھی اسی طرح نا پید ہے گیس لوڈ شیڈنگ نے عوام کو فاقے کرنے پر مجبور کردیا ہے نہ ہی ناشتہ اور نہ ہی رات کا کھانا نصیب ہوتا ہے اور یہ کہ روزانہ کئی کئی گھنٹے گیس کی لوڈ شیڈنگ نے جینا حرام کررکھا ہے شہر کی سیاسی،سماجی اور مذہبی تنظیموں نے حکومت سے مطالبہ کیا ہے کہ گیس لوڈ شیڈنگ کو مکمل ختم کیا جائے اور اس مسئلے کوجنگی بنیادوں پر حل کیا جائے تاکہ قصور کے شہریوں کے مسائل میں کمی لائی جاسکے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں