116

ملکہ کوہسار مری اور گلیات میں برفانی طوفان کے باعث 22 افراد جاں بحق ہوئے، ایک ہزار سے زائدگاڑیاں ابھی تک پھنسی ہوئی ہے۔

ملکہ کوہسار مری اور گلیات میں برفانی طوفان کے باعث 22 افراد جاں بحق ہوئے، ایک ہزار سے زائد گاڑیاں ابھی تک پھنسی ہوئی ہے۔

مری میں سیاحوں کی بڑی تعداد ویک اینڈ پر برفباری کا نظارہ کرنے پہنچی، جہاں ایک لاکھ سے زائد گاڑیاں مری اور گلیات میں داخل ہوئیں۔ ٹریفک کا نظام درہم برہم ہوگیا۔ فیملیز گاڑیوں میں محصور ہو کر رہ گئیں۔ شدید برفباری میں پھنسے سیاحوں کو نکالنے کیلئے آپریشن جاری ہے۔ تفصلات کے مطابق
مری اور گلیات میں انسانی المیہ ۔۔۔ہزاروں گاڑیاں برف میں پھنس گئیں اور بیس سے زائد افراد اپنی گاڑیوں میں ہی جاں بحق ہوگئے ۔جن میں پانچ بچے بھی شامل ہیں ۔
ایک لاکھ گاڑیاں برفباری دیکھنے مری اور گلیات میں داخل ہوئیں، اس کے بعد مری جانے والا راستہ بند کر دیا گیا ۔جو لوگ اپنی گاڑیوں میں پھنسے رہ گئے انہیں ان حالات سے نبٹنے کا طریقہ بھی معلوم نہیں تھا ۔ایسا معلوم ہوتا ہے کہ انہوں نے سردی سے بچنے کے لیے گاڑی کا ہیٹر اسٹارٹ رکھا ۔ سائلنسر چونکہ برف سے ڈھک چکا تھا لہذا کاربن مونو اکسائیڈ گاڑی میں بھرنے لگی ۔جس کی وجہ سے گاڑی میں بیٹھے لوگ غنوندگی میں چلے گئے، اور یہ نیند ابدی نیند ثابت ہوئی
سچی بات تو یہ ہے کہ ہم پاگل قوم ہیں، بغیر تیاری بچوں کو لے کر نکل پڑتے ہیں ۔۔۔۔خود بھی مصیبت میں پڑتے ہیں اور بچوں کو بھی اپنے پاگل پنے کی بھینٹ چڑھا دیتے ہیں ۔ اللہ تعالی ہمیں عقل دے

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں